ALL NEWS UPDATES ARE HERE

Pakistan Again On America




The Standard is located at East Village. This hotel is situated at 25 Cooper Sq, New York, NY 10003, USA. The hotel has beautiful view of New York City.

This hotel has 144 rooms and suits. The bed rooms have single double and triple bedrooms with attached washrooms. All the rooms are fully air conditioner.This hotel facilitates you with 24 Hour Reception. This hotel also accommodates with housekeeping service.



There is a restaurant in the hotel. The hotel has a bar.Every room has Coffee and Tea Maker tray and refrigerators. All the rooms are facilitated with color Television with all movie channels and news channels.The free internet service has been provided to all the rooms.






ہمیں نہ سکھائیں کہ ہم کیا کریں؟ پاکستان نے امریکی پالیسی کے جواب میں باقاعدہ بڑا قدم اٹھا لیا
جمعہ‬‮ 25 اگست‬‮ 2017 | 16:49
اسلام آباد(این این آئی) پاکستان نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے الزامات کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف کسی بھی ملک نے پاکستان کے برابر قربانیاں نہیں دیں ٗ افغانستان بارے پاکستان کی پالیسی واضح ہے ٗبھارت جیسا ریاستی دہشت گردی میں ملوث ملک خطے میں امن کا ضامن نہیں ہوسکتا ٗکشمیر کی جغرافیائی ہیت تبدیل کرنے پر بھی تحفظات ہیں ٗمسئلہ کشمیر مذاکرات سے حل ہو نا چاہیے۔ جمعہ کو ترجماندفتر خارجہ نفیس زکریا نے صحافیوں کو ہفتہ وار بریفنگ دیتے ہوئے ڈونلڈ ٹرمپ کے حالیہ افغان پالیسی بیان پر کہا کہ پاکستان

کی کابینہ اور قومی سلامتی کمیٹی نے اپنی حکمت عملی واضح کر دی ہے۔انہوںنے کہاکہ کسی بھی ملک نے پاکستان کے برابر قربانیاں نہیں دیں جبکہ امریکہ اور عالمی برادری حکومتی فیصلے سے آگاہ ہو چکے ہیں کہ پاکستان قومی مفاد میں دہشت گردی کیخلاف جنگ جاری رکھے گا جیسا کہ ہم نے بلاتعصب تمام دہشت گردوں کے خلاف کارروائی جاری رکھی ہوئی ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ بھارتی انتہا پسند بھارت کے ریاستی اداروں میں سرایت کر چکے ہیں جبکہ بھارت کی شدت پسند قوم پرست تنظیم راشٹریہ سوائم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) اور اس جیسی دیگر تنظیمیں بھارتی عدلیہ کے فیصلوں پر بھی اثر انداز ہو رہی ہیں اور بھارتی فوج آر ایس ایس کو بھی سپورٹ فراہم کرتی ہے۔نفیس زکریا نے کہاکہ بھارت کے مختلف ممالک کے ساتھ تنازعات جاری ہیں جبکہ ماضی میں بھی کہا تھا کہ بھارت کو خطے میں سلامتی کے ضامن کا کردار نہیں دیا جا سکتا کیونکہ بھارت جیسا ریاستی دہشت گردی میں ملوث ملک خطے میں امن کا ضامن نہیں ہوسکتا۔بھارت کی انتظامیہ کی جانب سے مقبوضہ کشمیر کے حریت رہنماؤں علی گیلانی، یاسین ملک، شبیر احمد شاہ اور آسیہ اندرابی کو زیر حراست رکھنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ کشمیر کیجغرافیائی ہیت تبدیل کرنے پر بھی تحفظات ہیں اور پاکستان نے اقوام متحدہ کیساتھ یہ مسئلہ اٹھایا ہے ٗمسئلہ کشمیر بھی مذاکرات سے حل ہونا چاہیے۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ بھارتی دہشت گردی کی بات متعدد مرتبہ ہوچکی ہے اور کلبھوشن یادیو کی پاکستانی سیکیورٹی فورسز کے ہاتھوں گرفتاری سے ثابت ہوا کہ بھارت پاکستان میں دہشت گردی کررہا ہے جبکہ ہم نے پاکستان میں تخریب کاری میں بھارتی کردار کو ہر فورم پراجاگر کیا۔ترجمان نے سمجھوتہ ایکسپریس میں ملوث کرنل پروہت سمیت ہندو انتہا پسند عناصر کی رہائی سے متعلق ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ بھارتی انتہا پسند بھارتی اداروں میں سرایت کر چکے ہیں، آر ایس ایس اور دیگر تنظیمیں بھارتی عدلیہ اور دیگر ادروں کے فیصلوں پر اثر انداز ہو رہی ہیں، سمجھوتہ ایکسپریس میں ملوث بھارتی انتہا پسندوں کی رہائی ہمارے موقف کی تائید ہے جب کہ کرنل پروہت کو بھارتی فوج کیحمایت حاصل تھی،بھارتی فوج آر ایس ایس کو بھی سپورٹ فراہم کرتی ہے۔انہوں نے کہا کہ افغانستان کے بارے میں پاکستان کی پوزیشن واضح ہے جبکہ پاکستان نے دیانتداری سے افغانستان میں امن کے لیے اپنا کردار ادا کیا ٗافغانستان میں امن و استحکام پاکستان کے مفاد میں ہے۔انہوں نے امریکہ کو تاریخ یاد دلاتے ہوئے کہا کہ پاکستان نے افغانستان میں امریکی دستوں کو نہ صرف زمینی امداد بلکہ فضائی راہداری بھی فراہم کی تھی جبکہ پاکستاناور اس کی عوام نے اس انسداد دہشت گردی کی جنگ کی بھاری قیمت ادا کی۔انہوں نے بتایا کہ جب سابق وزیر اعظم کی افغان صدر سے آستانہ میں ملاقات ہوئی تو کیو سی جی کے فورم کے قیام کا فیصلہ کیا گیا تھا کیو سی جی کو دوبارہ فعال یا متحرک کرنے کا فیصلہ ان چاروں ممالک کی باہمی رضا مندی سے ہوا تھا۔ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے سعودی عرب اور سیکرٹری خارجہ تہمینہ جنجوعہ نے چینکا دورہ کیا جبکہ وزیر خارجہ علاقائی ممالک کا دورہ کر رہے ہیں جس کا مقصد دوست ممالک سے مشاورت کرنا ہے۔انہوںنے کہاکہ بھارت امریکہ کیساتھ تجارت سے اربوں ڈالر حاصل کرتا ہے اور وہ چاہتے ہیں کہ بھارت افغانستان کی اقتصادی معاونت اور ترقی کیلئے مزید کام کرے







The hotel accommodates with laundry services and dry cleaning facility.The staff of the hotel is friendly and multilingual.

There are business centers. The staff can help you managing a conference here if you want. The hotel can accommodate you with tourist information if you want. You can also rent bike from the hotel. The hotel accommodates with paid parking for the guests.


There are many attractive places in the surrounding of the hotel. This hotel is so close to the Central Park. The Standard hotel is at walking from Merchant’s House Museum. The Orpheum Theater is also at 5 minutes walking distance. The Tompkins Square Park is so close to the hotel. There is a fitness center nearby the hotel. The hotel charges are from $311 to $843.



No comments:

Note: only a member of this blog may post a comment.

Powered by Blogger.